November 15, 2023 | 10:39 am

کپتانی کوئی راکٹ سائنس نہیں بس لیڈنگ کا طریقہ آنا چاہئے: یونس خان

captani koi rocket science nahi bas leading ka tariqa ana cahiye younis khan
رپورٹ: جعفر حسین۔۔۔ آئی س سی ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2009 کی چیمپئن ٹیم کے کپتان یونس خان نے جیو نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اپنے لیڈنگ کوالیٹیز کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ موجودہ ورلڈ کپ میں کپتانی اتنا بڑا اشو نہیں تھا بابر اعظم کو کپتانی اور اپنی بیٹنگ کو الگ الگ زاویے میں ڈھالنا چاہے تھا۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ ورلڈ کپ کا بغور جائزہ لیں تو یہ دیکھیں کہ ہم نے فنش کہاں کیا ہے اگر ہم بغیر پلانگ کے پانچویں نمبر پر آسکتے ہیں جہاں دیگر ٹیموں سے پھر بھی قدر بہتر ہیں اور اگر ہم تھوڑی سے پلاننگ کر لیتے، تھوڑی ٹیوننگ کر لیتے، تھوڑی ایڈجسٹمنٹ کر لیتے تو ہم ٹاپ فور میں فنش کرتے اور سیمی کھیل رہے ہوتے۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے یونس خان نے کہا کہ یہاں جو بڑے پلئیر ہوتے ہیں وہ سیمی فائنل اور فائنل میں بڑی انگز کھیل جاتے ہیں جیسے 2009 ورلڈ کپ میں شاہد آفریدی تھے، موجودہ ورلڈ کپ میں فخر زمان نے بیک ٹو بیک دو میچز میں امیزنگ بیٹنگ کی ان جیسے بڑے کھلاڑیوں کو کہاں استعمال کرنا کیسے کرنا ہے یہ آپ کو آنا چاہئے۔

یونس خان نے کہا کہ اگر ٹیم بھارت کی بات کریں تو روہیت شرما، ویرات کوہلی، اور راہول ٹاپ کے بیٹسمین ہیں جو پورے ورلڈ کپ میں پرفارم کررہے ہیں بولنگ میں اسپنرز کے ساتھ فاسٹ بولرز کی کارکردگی کی وجہ سے ان کی ٹیم ٹاپ پر ہے تو ایسی ہی پلاننگ کی ضرورت ہے ٹیم پلاننگ ، ایڈجسٹمنٹ کوئی راکٹ سائنس نہیں کہ اس میں پہاڑ کاٹنا پڑے۔

انہوں نے کہا کہ مشکل کام ان کے لئے ہے جو پلاننگ نہیں کرپاتے اور نہ ہی اس میں کوئی نئی تھیوری لانی ہے نہ ہی کوئی میتھمیٹک کا استعمال کرنا ہے آپ کو پاور پلے کا صحیح استعمال آنا چاہئے اور ضروری پاور پلے جو 11 اوور سے 40 اوور تک کا ہے وہ کیسے استعمال کرنا ہے یہ بہت ضروری ہے وہاں اسپینر اور فاسٹ بولرز کو کیسے استعمال کیا جاسکتا ہے یہ پلاننگ ہونی چاہئے۔

یونس خان نے کہا کہ آج جو بابر اعظم کی کپتانی کی ہر پلیٹ فارم پر باتیں ہورہی ہیں میرے خیال میں یہ اتنا مشکل کام نہیں ہے پہلے آپ کو ایک اچھی ٹیم سلیکٹ کرکے فرنٹ سے لیڈ کرنا ہے آپ مثال بنیں پلیئرز خود ہی آپ کو فالو کریں گے دوسری جانب اپنی بیٹنگ کرتے وقت پورا فوکس محظ اپنی بیٹنگ پر دیں اور جب کپتانی کا رول ادا کرنا ہے ٹیم کھلانی ہے تو اس وقت اپنی لیڈنگ شپ کوالیٹیز دکھانی ہیں یہاں یہ نہیں سوچنا کہ آپ کی بیٹنگ کے وقت رنز بنے ہیں یا نہیں سینچری بنائی ہوئی ہے یا نہیں اس وقت آپ کو اپنا رول کپتانی کا ادا کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہی ٹیم اگر تھوڑی سی پلاننگ اور ایڈجسٹمنٹ کرلے تو سات ماہ بعد ہونے والا ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ جیت سکتی ہے ۔